Raiwind Jor 2015 Bayans Listen & Download

Arrow up
Arrow down

+

17 - دسمبر - 2017
۲۷ - ربيع الأول - ۱۴۳۹

سوال:

بعض دفعہ جب ڈاکٹرکسی میڈیکل کمپنی کی دوائی لکھتاہے اورڈاکٹرکے علم کے مطابق وہ دوائی اس مریض کیلئے موزوں ہے تومیڈیکل کمپنی والے ڈاکٹرکومختلف تحائف دیتے ہیں توکیاوہ تحائف لیناجائزہے؟ اس میں ڈاکٹراس کمپنی والوں سے کچھ مطالبہ نہیں کرتا۔


جواب:

کسی مخصوص کمپنی کی دواء مریض کولکھ کردینا، پھردواسازکمپنیوں سے کمیشن ودیگرمراعات حاصل کرناجائزہے جبکہ اوپرذکرکردہ شرائط کے ساتھ درجِ ذیل شرائط کابھی لحاظ کیاجاتاہو۔
(۱) محض کمیشن وصول کرنے کی خاطرڈاکٹرغیرمعیاری وغیرضروری اورمہنگی ادویات تجویزنہ کرے۔
(۲) کسی دوسری کمپنی کی دواء مریض کیلئے زیادہ مفیدسمجھتے ہوئے خاص اس کمپنی ہی کی دواتجویزنہ کرے۔
(۳) دواء سازکمپنیاں ڈاکٹرکودیئے جانے والے کمیشن تحفہ اورمراعات کاخرچہ ادویات مہنگی کرکے مریض سے وصول نہ کریں۔
(۴) کمیشن تحفہ ومراعات کی ادائیگی کاخرچہ وصول کرنے کیلئے ادویات کے معیارمیں کمی نہ کرے۔ واللہ سبحانہ وتعالیٰ اعلم


حوالہ:

 


Fatwa No. fno81.404

View Original Fatwa | Download Original Fatwa

comments powered by Disqus

Go to top
JSN Boot template designed by JoomlaShine.com